Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

شاعر کے دل کی تمنا

MORE BYلالہ انوپ چند آفتاب پانی پتی

    مٹ جائیں ملک سے بغض و حسد اور دل میں وطن کی عزت ہو

    دامن میں فضاؤں کے ہر جا اک امن و سکوں کی ثروت ہو

    سینے ہوں پاک کدورت سے ہر لب پر نغمۂ الفت ہو

    فردوس بریں کا نمونہ پھر دنیا میں پیارا بھارت ہو

    الفت کا سر میں سودا ہے جذبات کا طوفاں برپا ہے

    گھر گھر میں پریم کی گنگا ہو شاعر کے دل کی تمنا ہے

    اے بھارت ماتا لال ترے اس دور خزاں میں سنبھل جائیں

    سانچے میں پریم اور انس کے اب سب ہندو مسلم ڈھل جائیں

    نغموں سے سچی محبت کے دنیا کی فضائیں بدل جائیں

    یہ منظر دیکھ کے الفت کے آنسو آنکھوں سے نکل جائیں

    الفت کا سر میں سودا ہے جذبات کا طوفاں برپا ہے

    گھر گھر میں پریم کی گنگا ہو شاعر کے دل کی تمنا ہے

    وہ ملک ہے دنیا سے اچھا جو رشک جناں کہلاتا ہے

    آرام و راحت کی چیزیں سب جس میں انساں پاتا ہے

    اے مرلیؔ دھر کی جنم بھومی تو سارے سکھوں کی داتا ہے

    ہم تیری آن پہ مرتے ہیں تو پیاری بھارت ماتا ہے

    الفت کا سیر میں سودا ہے جذبات کا طوفاں برپا ہے

    گھر گھر میں پریم کی گنگا ہو شاعر کے دل کی تمنا ہے

    بھر بھر کے جام محبت کے میخانۂ دہر میں خوب پئیں

    گوکل میں نند کا لالہ ہو مرلی کی پیاری ٹیر سنیں

    وہ نغمے ہواؤں میں گونجیں سوتے ہوئے جذبے جاگ اٹھیں

    اجڑی ہوئی بستی کو دل کی یوں اہل وطن آباد کریں

    الفت کا سر میں سودا ہے جذبات کا طوفاں برپا ہے

    گھر گھر میں پریم کی گنگا ہو شاعر کے دل کی تمنا ہے

    ہر شخص ہو وجد کے عالم میں اک دل کش راگ لبوں پر ہو

    روحانی نغمے سن سن کر بیدار بشر کا مقدر ہو

    آنکھوں کے سامنے دنیا میں اک سچے پریم کا منظر ہو

    اک انس و محبت کا عالم عالم میں آج سراسر ہو

    الفت کا سر میں سودا ہے جذبات کا طوفاں برپا ہے

    گھر گھر میں پریم کی گنگا ہو شاعر کے دل کی تمنا ہے

    جلووں سے حسن ازل کے اب سب خورد و کلاں پر نور رہیں

    مے پی کے عشق حقیقی کی الفت کے نشے میں چور رہیں

    دنیا میں رہ کر دنیا کے جھگڑوں سے کوسوں دور رہیں

    ہم پیارے کرشن کی بھگتی میں سرشار رہیں مسرور رہیں

    الفت کا سیر میں سودا ہے جذبات کا طوفاں برپا ہے

    گھر گھر میں پریم کی گنگا ہو شاعر کے دل کی تمنا ہے

    مأخذ :
    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے