شمع رہگزر

اسرار الحق مجاز

شمع رہگزر

اسرار الحق مجاز

MORE BY اسرار الحق مجاز

    زیست بے اختیار گزری ہے

    جوں نسیم بہار گزری ہے

    دل میں برپا قیامتیں کرتی

    نگہ شرمسار گزری ہے

    ساغر و ساز دور ہی رکھیے

    ورنہ یوں بھی بہار گزری ہے

    زمزمہ سنج و زرفشاں نکہت

    پھر صبا پر سوار گزری ہے

    کیا گزر گاہ ہے محبت کی

    خود بہ خود بار بار گزری ہے

    اک در شہوار صد بستاں

    پھر لب جوئبار گزری ہے

    ہائے شیرینیٔ لب لعلیں

    مسکراتی بہار گزری ہے

    وائے طوفان سینۂ سیمیں

    دختر کوہسار گزری ہے

    زندگی کی جمیل راہوں سے

    خود اجل شرمسار گزری ہے

    مآخذ:

    • Book : Aahang (Pg. 213)
    • Author : Asrar-ul-Haq Majaz
    • مطبع : National Council for Promotion of Urdu Language, Delhi (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY