وہ موڑ

شہریار

وہ موڑ

شہریار

MORE BYشہریار

    پھر تری تتلی نما صورت مجھے یاد آ گئی

    مجھ کو وہ لمحہ ابھی بھولا نہیں

    ایک کونے میں کئی لوگوں کے ساتھ

    گفتگو میں منہمک کھویا ہوا

    میری آنکھوں نے کبھی تجھ سا کوئی دیکھا نہ تھا

    میں تجھے تکنے لگا

    دیر تک تکتا رہا

    آنکھ سے کانوں سے ہونٹوں سے تجھے تکتا رہا

    کیا عجب دیوانگی تھی

    رشک آیا بخت پہ اپنے مجھے

    لفظ کے اسرار مجھ پہ وا ہوئے

    گھنٹیاں سی میرے کانوں میں بجیں

    نور کے سیلاب میں ڈوبی ہوئی اس شام کی

    ایک اک ساعت ترے ہمراہ ہے

    رک گیا ہے وقت اس اک موڑ پر

    میں جدائی کے لئے مجبور تھا

    تو جدائی پر جہاں مسرور تھا

    مآخذ :
    • کتاب : sooraj ko nikalta dekhoon (Pg. 538)
    • Author : shaharyar
    • مطبع : educational book house (2013)
    • اشاعت : 2013

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY