زبان

MORE BYمصطفیٰ ارباب

    مجھے

    صرف نفرت کی زبان آتی ہے

    نفرت کا لغت نویس بن کر

    میں اپنی زبان بھول چکا ہوں

    محبت میری ماں بولی تھی

    مگر زندہ رہنے کے لیے

    مجھے نفرت کی زبان سیکھنی پڑی

    میں ایک لڑکی کو

    تلاش کر رہا ہوں

    وہ مجھے

    محبت کی متروک زبان سکھا دے گی

    ایک لڑکی

    اپنی ماں بولی کبھی نہیں بھولتی

    related content

    نظم

    چاہتوں کا جہان ہے اردو

    چاہتوں کا جہان ہے اردو

    کرشن موہن

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY