Ahmad Kamal Parwazi's Photo'

احمد کمال پروازی

1944 | اجین, ہندوستان

احمد کمال پروازی

غزل 20

اشعار 19

اس قدر آپ کے بدلے ہوئے تیور ہیں کہ میں

اپنی ہی چیز اٹھاتے ہوئے ڈر جاتا ہوں

تجھ سے بچھڑوں تو تری ذات کا حصہ ہو جاؤں

جس سے مرتا ہوں اسی زہر سے اچھا ہو جاؤں

مجھ کو معلوم ہے محبوب پرستی کا عذاب

دیر سے چاند نکلنا بھی غلط لگتا ہے

وہ اپنے حسن کی خیرات دینے والے ہیں

تمام جسم کو کاسہ بنا کے چلنا ہے

تم مرے ساتھ ہو یہ سچ تو نہیں ہے لیکن

میں اگر جھوٹ نہ بولوں تو اکیلا ہو جاؤں

آڈیو 15

برائے_زیب اس کو گوہر_و_اختر نہیں لگتا

پھول پر اوس کا قطرہ بھی غلط لگتا ہے

تجھ سے بچھڑوں تو تری ذات کا حصہ ہو جاؤں

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"اجین" کے مزید شعرا

  • نواز عصیمی نواز عصیمی
  • آنند ورما آنند ورما