Ameen Hazin's Photo'

امین حزیں

1884 - 1967

امین حزیں کے شعر

نمود رنگ و بو نے مار ڈالا

اسی کی آرزو نے مار ڈالا

تجھ کو تری ہی آنکھ سے دیکھ رہی ہے کائنات

بات یہ راز کی نہیں اپنا خود احترام کر

رستے کی اونچ نیچ سے واقف تو ہوں امیںؔ

ٹھوکر قدم قدم پہ مگر کھا رہا ہوں میں

یوں دل ہے سر بہ سجدہ کسی کے حضور میں

جیسے کہ غوطہ زن ہو کوئی بحر نور میں