noImage

اقبال اشہر قریشی

1950 - 1993 | ناگپور, ہندوستان

اقبال اشہر قریشی کی اشعار

ستایا آج مناسب جگہ پہ بارش نے

اسی بہانے ٹھہر جائیں اس کا گھر ہے یہاں

اشہرؔ بہت سی پتیاں شاخوں سے چھن گئیں

تفسیر کیا کریں کہ ہوا تیز اب بھی ہے

درخت ہاتھ ہلاتے تھے رہنمائی کو

مسافروں نے تو کچھ بھی نہیں کہا مجھ سے

جو لوگ لوٹ کے خود میرے پاس آئے ہیں

وہ پوچھتے ہیں کہ اشہرؔ یہیں پہ اب تک ہو

خود کو جب بھول سے جاتے ہیں تو یوں لگتا ہے

زندگی تیرے عذابوں سے نکل آئے ہیں