noImage

مائل لکھنوی

اشعار 7

نگاہ ناز کی پہلی سی برہمی بھی گئی

میں دوستی کو ہی روتا تھا دشمنی بھی گئی

  • شیئر کیجیے

یاد اور ان کی یاد کی اللہ رے محویت

جیسے تمام عمر کی فرصت خرید لی

  • شیئر کیجیے

نظر اور وسعت نظر معلوم

اتنی محدود کائنات نہیں

  • شیئر کیجیے

محبت اور مائلؔ جلد بازی کیا قیامت ہے

سکون دل بنے گا اضطراب آہستہ آہستہ

  • شیئر کیجیے

میں نے دیکھے ہیں دہکتے ہوئے پھولوں کے جگر

دل بینا میں ہے وہ نور تمہیں کیا معلوم

  • شیئر کیجیے