noImage

محضر لکھنوی

محضر لکھنوی کی اشعار

قفس سے آشیاں تبدیل کرنا بات ہی کیا تھی

ہمیں دیکھو کہ ہم نے بجلیوں سے آشیاں بدلا