Meer Asar's Photo'

میر اثر

- 1795 | دلی, ہندوستان

غزل 36

اشعار 21

کیا کہوں کس طرح سے جیتا ہوں

غم کو کھاتا ہوں آنسو پیتا ہوں

  • شیئر کیجیے

تیرے آنے کا احتمال رہا

مرتے مرتے بھی یہ خیال رہا

  • شیئر کیجیے

کام تجھ سے ابھی تو ساقی ہے

کہ ذرا ہم کو ہوش باقی ہے

  • شیئر کیجیے

جس گھڑی گھورتے ہو غصہ سے

نکلے پڑتا ہے پیار آنکھوں میں

  • شیئر کیجیے

بے وفا کچھ نہیں تیری تقصیر

مجھ کو میری وفا ہی راس نہیں

کتاب 4

دیوان اثر

 

1930

دیوان اثر

مع حیات و شاعری

1978

خواجہ محمد میر اثر

مونوگراف

2007

مثنوی خواب و خیال

 

1926

 

تصویری شاعری 1

کیا کہوں کس طرح سے جیتا ہوں غم کو کھاتا ہوں آنسو پیتا ہوں

 

متعلقہ شعرا

  • خواجہ میر درد خواجہ میر درد بھائی

"دلی" کے مزید شعرا

  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • تاباں عبد الحی تاباں عبد الحی
  • حسرتؔ موہانی حسرتؔ موہانی
  • مومن خاں مومن مومن خاں مومن
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • نسیم دہلوی نسیم دہلوی
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر
  • ظہیرؔ دہلوی ظہیرؔ دہلوی