غزل

اک دھواں اٹھ رہا ہے آنگن سے

نعمان شوق

اک فلک اور ہی سر پر تو بنا سکتے ہیں

نعمان شوق

ایک صحرا ہے مری آنکھ میں حیرانی کا

نعمان شوق

سحر کیسا یہ نئی رت نے کیا دھرتی پر

نعمان شوق

سیاہ دشت کی جانب سفر دوبارہ کیا

نعمان شوق

ہماری طرح حروف_جنوں کے جال میں آ

نعمان شوق

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI