noImage

سجاد شمسی

1914 | لندن, برطانیہ

نامور فکشن رائیٹر، ناول نگار و برصغیر کی ترقی پسند تحریر کے رہنماؤں میں سے ایک

نامور فکشن رائیٹر، ناول نگار و برصغیر کی ترقی پسند تحریر کے رہنماؤں میں سے ایک

غزل 2

 

اشعار 2

ہیں قہقہے کسی کے کسی کی ہیں سسکیاں

شامل رہا خوشی میں کسی بے بسی کا شور

یہ کیسا حادثہ گزرا یہ کیسا سانحہ بیتا

نہ آنگن ہے نہ چھت باقی نہ ہیں دیوار و در باقی

 

تصویری شاعری 1

دعاؤں میں اثر باقی نہ آہوں میں اثر باقی ہے کچھ لے دے کے گر باقی تو ہے اک چشم_تر باقی یہ کیسا حادثہ گزرا یہ کیسا سانحہ بیتا نہ آنگن ہے نہ چھت باقی نہ ہیں دیوار_و_در باقی چمن والوں کی بد_ذوقی پہ کلیاں جان کھوتی ہیں نہ ہیں اہل_نظر باقی نہ کوئی دیدہ_ور باقی پتا کیا پوچھتے ہیں آپ ہم صحرا_نوردوں سے نہ اپنا شہر ہے باقی محلہ ہے نہ گھر باقی فضائیں چپ ہوائیں چپ صدائیں چپ ندائیں چپ نوائے_نیم_شب باقی نہ ہے بانگ_سحر باقی خدا جانے نظام_مے_کدہ کو کیا ہوا شمسیؔ نہ وہ حسن_عطا باقی نہ وہ لطف_نظر باقی

 

"لندن" کے مزید شعرا

  • ساقی فاروقی ساقی فاروقی
  • اختر ضیائی اختر ضیائی
  • ضیا الدین احمد شکیب ضیا الدین احمد شکیب
  • ہلال فرید ہلال فرید
  • اکبر حیدرآبادی اکبر حیدرآبادی
  • فرخندہ رضوی فرخندہ رضوی
  • عبدالحفیظ ساحل قادری عبدالحفیظ ساحل قادری
  • عامر موسوی عامر موسوی
  • بلبل کاشمیری بلبل کاشمیری
  • شبانہ یوسف شبانہ یوسف