Shakeb Jalali's Photo'

شکیب جلالی

1934 - 1966 | پاکستان

معروف پاکستانی شاعر، کم عمری میں خود کشی کی

معروف پاکستانی شاعر، کم عمری میں خود کشی کی

غزل

آ کے پتھر تو مرے صحن میں دو چار گرے

نعمان شوق

بد_قسمتی کو یہ بھی گوارا نہ ہو سکا

نعمان شوق

جہاں تلک بھی یہ صحرا دکھائی دیتا ہے

نعمان شوق

خموشی بول اٹھے ہر نظر پیغام ہو جائے

نعمان شوق

دشت و صحرا اگر بسائے ہیں

نعمان شوق

دنیا والوں نے چاہت کا مجھ کو صلہ انمول دیا

نعمان شوق

گلے ملا نہ کبھی چاند بخت ایسا تھا

نعمان شوق

موج_صبا رواں ہوئی رقص_جنوں بھی چاہئے

نعمان شوق

نقاب_رخ اٹھایا جا رہا ہے

نعمان شوق

وہ سامنے تھا پھر بھی کہاں سامنا ہوا

نعمان شوق

وہاں کی روشنیوں نے بھی ظلم ڈھائے بہت

نعمان شوق

وہی جھکی ہوئی بیلیں وہی دریچہ تھا

نعمان شوق

کوئی اس دل کا حال کیا جانے

نعمان شوق

ہم_جنس اگر ملے نہ کوئی آسمان پر

نعمان شوق

یہ جلوہ_گاہ_ناز تماشائیوں سے ہے

نعمان شوق

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI