noImage

تاباں عبد الحی

1715 - 1749 | دلی, ہندوستان

شاعری کے علاوہ اپنی خوش شکلی کے لئے بھی مشہور ہیں۔ کم عمری میں وفات پائی۔

شاعری کے علاوہ اپنی خوش شکلی کے لئے بھی مشہور ہیں۔ کم عمری میں وفات پائی۔

تخلص : 'تاباں'

اصلی نام : عبد الحی

پیدائش :دلی

میر عبدالحی تاباںؔ دہلی کے رہنے والے اور دور محمد شاہی کے شعراء میں سے تھے جتنے تذکرے شیفتۂ تک لکھے گئے ان سب میں ان کے حسن و جمال کی تعریف بے انہائی کی گئی ہے ۔ شراب کثرت سے پیتے تھے ۔ اسی کے باعث انتقال کیا ۔ ان کی شاگردی کے متعلق تذکروں میں اختلاف ہے لیکن مصحفیؔ کاقول سب سے زیادہ صحیح معلوم ہوتا ہے ۔ حاتمؔ نے اسے تلامذہ میں ان کا نام بھی شریک کیا ہے ۔ مگر حشمت کی شاگردی کا ایک قطعی ثبوت تاباںؔ کے دیوان میں موجود ہے ۔ تاباںؔ نے ایک مثنوی اپنے استاد کی مدح میں لکھی ہے جس میں وہ صاف صاف حشمتؔ کی شاگردی کا اعتراف کرتے ہیں ۔ تاباںؔ کا کلام صاف سادہ اور شیریں ہے نہ تخیئل کی بلند پردازی ہے نہ خیالات کی گہری نہ جذبات کی بے تابی عشق محبت کی تمام باتیں ہیں لیکن بہ قول مولوی عبدالحق: زبان اور بول چال کا لطف ضرور پایا جاتا ہے اگرچہ تاباںؔ دور محمد شاہی کے شاعر ہی لیکن قدیم الفاظ اور محاورے ان کے کلام میں نسبتاً کم ہیں میرؔ صاحب نے ان کے کلام کے متعلق بہت ٹھیک رائے دی ہے ۔ دیوان میں غزلوں کے علاوہ کچھ رباعیات ایک مثلث مخمس ، مسدس ایک ترکیب ہند، ایک مستزاد ، ایک قصیدہ مدح بادشاہ میں ایک مثنوی اپنے استاد کی مدح میں چند تضمین حافظ اور مظہر جان جاناں ( جن کے یہ مرید تھے) وغیرہ کی غزلوں پر اور چند تاریخی قطعات ہیں ۔ دیوان انجمن ترقی اردو کی طرف سے چھپ گیا ہے وفات1163ھ و1164ھ مطابق1749ء و1750کے درمیان جوانی ہی میں ہوئی ۔

موضوعات