noImage

تصویر دہلوی

- 1868/9 | الور, ہندوستان

اشعار 5

ایسا ترے فراق میں بیمار ہو گیا

میں چارہ گر کی جان کو آزار ہو گیا

  • شیئر کیجیے

دل کو رو بیٹھے کہ دل لے کے وہ گھر بیٹھ رہے

ہم ادھر بیٹھ رہے اور وہ ادھر بیٹھ رہے

  • شیئر کیجیے

وہ کون سی جفا ہے کہ جو تم نے کی نہیں

وہ کون سا ستم ہے جو میں نے سہا نہیں

  • شیئر کیجیے

دل اس چشم کو وہ دل زار کو

کہ دیکھے ہے بیمار بیمار کو

  • شیئر کیجیے

تمنا جو نہ رکھتا ہو جھکائے وہ نظر کس سے

اسے شادی و غم کس کا اسے سود و ضرر کس سے

  • شیئر کیجیے

"الور" کے مزید شعرا

  • جی آر وشیشٹھ جی آر وشیشٹھ