آبرو شاہ مبارک کے 10 منتخب شعر

اردو شاعری کے بنیاد سازوں میں سے ایک، میر تقی میر کے ہم عصر

تمہارے لوگ کہتے ہیں کمر ہے

کہاں ہے کس طرح کی ہے کدھر ہے

آبرو شاہ مبارک

دور خاموش بیٹھا رہتا ہوں

اس طرح حال دل کا کہتا ہوں

آبرو شاہ مبارک

تم نظر کیوں چرائے جاتے ہو

جب تمہیں ہم سلام کرتے ہیں

آبرو شاہ مبارک

خداوندا کرم کر فضل کر احوال پر میرے

نظر کر آپ پر مت کر نظر افعال پر میرے

آبرو شاہ مبارک

بوساں لباں سیں دینے کہا کہہ کے پھر گیا

پیالہ بھرا شراب کا افسوس گر گیا

آبرو شاہ مبارک

یوں آبروؔ بناوے دل میں ہزار باتیں

جب رو بہ رو ہو تیرے گفتار بھول جاوے

آبرو شاہ مبارک

یارو ہمارا حال سجن سیں بیاں کرو

ایسی طرح کرو کہ اسے مہرباں کرو

آبرو شاہ مبارک

عشق کا تیر دل میں لاگا ہے

درد جو ہووتا تھا بھاگا ہے

آبرو شاہ مبارک

تمہاری دیکھ کر یہ خوش خرامی آب رفتاری

گیا ہے بھول حیرت سیں پیا پانی کے تئیں بہنا

آبرو شاہ مبارک

ترا ہر عضو پیارے خوش نما ہے عضو دیگر سیں

مژہ سیں خوب تر ابرو و ابرو سیں بھلی انکھیاں

آبرو شاہ مبارک