Shariq Kaifi's Photo'

شارق کیفی

1961 | بریلی, ہندوستان

ای- کتاب 3

عام سا رد عمل

 

1989

اپنے تماشے کا ٹکٹ

 

2010

یہاں تک روشنی آتی کہاں تھی

 

2008

 

تصویری شاعری 3

ممکن ہی نہ تھی خود سے شناسائی یہاں تک لے آیا مجھے میرا تماشائی یہاں تک رستہ ہو اگر یاد تو گھر لوٹ بھی جاؤں لائی تھی کسی اور کی بینائی یہاں تک شاید تہہ_دریا میں چھپا تھا کہیں صحرا میری ہی نظر دیکھ نہیں پائی یہاں تک محفل میں بھی تنہائی نے پیچھا نہیں چھوڑا گھر میں نہ ملا میں تو چلی آئی یہاں تک صحرا ہے تو صحرا کی طرح پیش بھی آئے آیا ہے اسی شوق میں سودائی یہاں تک اک کھیل تھا اور کھیل میں سوچا بھی نہیں تھا جڑ جائے_گا مجھ سے وہ تماشائی یہاں تک یہ عمر ہے جو اس کی خطاوار ہے شارقؔ رہتی ہی نہیں باتوں میں سچائی یہاں تک

 

ویڈیو 15

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر

شارق کیفی

..شارق کیفی

Shariq Kaifi is a famous Urdu poet from Bareily (U.P.). Watch him reciting his ghazal at Rekhta Studio. شارق کیفی

Kisi ke samajhdar hone talak_Nazm by Shariq Kaifi

Shariq Kaifi, one of the leading Urdu poet from India reciting his ghazals at Mushaira at Delhi in 2014 organized by Rekhta.org - the largest website for Urdu poetry. شارق کیفی

Kuch qadam aur jism ko dhona hai yahan_Shariq kaifi

Shariq Kaifi, one of the leading Urdu poet from India reciting his ghazals at Mushaira at Delhi in 2014 organized by Rekhta.org - the largest website for Urdu poetry. شارق کیفی

Lutf Aya is Bar Bikhartey janey mien by Shariq Kaifi

شارق کیفی

Mahol banane wale jumle_Nazm by Shariq kaifi

Shariq Kaifi, one of the leading Urdu poet from India reciting his ghazals at Mushaira at Delhi in 2014 organized by Rekhta.org - the largest website for Urdu poetry. شارق کیفی

Shariq Kaifi reciting his Ghazal/Nazm at Mushaira (Shaam-e-Sher) by Rekhta.org-2014

Shariq Kaifi, one of the leading Urdu poet from India reciting his ghazals at Mushaira at Delhi in 2014 organized by Rekhta.org - the largest website for Urdu poetry. شارق کیفی

Tere gham se ubharna chahta hun_Shariq kaifi

Shariq Kaifi, one of the leading Urdu poet from India reciting his ghazals at Mushaira at Delhi in 2014 organized by Rekhta.org - the largest website for Urdu poetry. شارق کیفی

yahaan to apni Khabar naheen thi by Shariq Kaifi یہاں تو اپنی خبر نہیں تھی از شارق کیفی

شارق کیفی

شارق کیفی

Shariq Kaifi is a famous Urdu poet from Bareily (U.P.). Watch him reciting his ghazal at Rekhta Studio. شارق کیفی

نگاہ نیچی ہوئی ہے میری

شارق کیفی

کچھ قدم اور مجھے جسم کو ڈھونا ہے یہاں

شارق کیفی

ہیں اب اس فکر میں ڈوبے ہوئے ہم

شارق کیفی

یوں بھی صحرا سے ہم کو رغبت ہے

شارق کیفی

یہ چپکے چپکے نہ تھمنے والی ہنسی تو دیکھو

شارق کیفی

آڈیو 18

انتہا تک بات لے جاتا ہوں میں

ایک مدت ہوئی گھر سے نکلے ہوئے

خموشی بس خموشی تھی اجازت اب ہوئی ہے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

مصنفین متعلقہ

  • خواجہ جاوید اختر خواجہ جاوید اختر ہم عصر
  • احمد محفوظ احمد محفوظ ہم عصر
  • عالم خورشید عالم خورشید ہم عصر
  • نعمان شوق نعمان شوق ہم عصر
  • طفیل چترویدی طفیل چترویدی ہم عصر
  • جمال اویسی جمال اویسی ہم عصر
  • شکیل اعظمی شکیل اعظمی ہم عصر
  • کیفی وجدانی کیفی وجدانی والد
  • شکیل جمالی شکیل جمالی ہم عصر

مصنفین کے مزید "بریلی"

  • نیر مسعود نیر مسعود
  • وحید الدین سلیم وحید الدین سلیم
  • علیم صبا نویدی علیم صبا نویدی
  • خورشید اکرم خورشید اکرم
  • انیس اشفاق انیس اشفاق
  • ناز قادری ناز قادری
  • شمیم حنفی شمیم حنفی
  • شمس الرحمن فاروقی شمس الرحمن فاروقی
  • اقبال مجید اقبال مجید
  • شکیل الرحمن شکیل الرحمن