مصنفینکی فہرست

سیکڑوں شاعروں کا منتخب کلام

مقبول افسانہ نویس اور ڈرامہ نگار، رومانی انداز کی تحریروں کے لیے جانے جاتے ہیں۔

1928 -2011 لاہور

معروف معاصر شاعر، ادبی جریدے ’استفسار‘ کے مدیر

پاکستانی شاعر، صحافی اور مترجم۔ جدید سندھی ادب کے تراجم پر مشتمل اپنی کتابوں کے لیے معروف

1928 کراچی

ملکی اور ملی شخصیات ، واقعات اور تہواروں پر اپنی نظموں کے لیے معروف، ’ہندوستانی سورما‘ کے نام سے ایک ڈرامہ بھی لکھا

پاکستان کے نامور افسانہ نگار اور ڈرامہ نویس۔

جدید اردو تنقید کے بنیاد سازوں میں شامل ہیں

1911 -2002 علی گڑہ

ممتاز شاعرجنہیں لکھنوی شاعری کے شاعرانہ محاورں پر دسترس تھی

1896 -1978 کراچی

پاکستان کے اہم شاعروں میں شامل، جدید معاشرتی مسائل کو اپنی نظموں اورغزلوں کا موضوع بنانے کے لیے جانے جاتے ہیں

ریاست کشمیر کے شاعروں میں نمایاں۔ ’راستے منزلیں‘ اور ’ پتہ پتہ‘ کے نام سے شعری مجموعےشائع ہوئے

ممتاز مابعد جدید شاعر، 1996میں اچانک لاپتہ ہوگئے

روایتی رنگ کی شاعری کرنے والے پرگو شاعر، متعدد شعری مجموعے شائع ہوئے

لکھنؤ کے ممتاز شاعر اور عالم، داغ اور ناطق گلاوٹھی کے شاگرد۔ غالب اور حافظ کے کلام کی شرح و ترجمہ کیا۔ اس کے علاوہ ہندوستان کی قدیم شاعرات کا تذکرہ بھی مرتب کیا

1893 -1946 لکھنؤ

مزاحیہ شاعروں میں شامل، ’انداز بیاں‘ نام سےشاعری کا مجموعہ شائع ہوا

شاعر اور مصنف، بچوں کے ادب پر اپنے تنقیدی و تحقیقی کام کے لیے جانے جاتے ہیں

ہریانہ سے تعلق رکھنے والے شاعر اور صحافی، ہفتہ وار اخبار ’پیغام‘ کے مدیر

اہم پاکستانی شاعر جو مشاعروں میں بھی مقبول ہیں

1961 لاہور

ممبئی کے اہم جدید شاعر، سنجیدہ شاعری کے حلقوں میں مقبول

1950 ممبئی

اہم پاکستانی شاعراور مترجم، جنہوں نے عالمی ادب کے تراجم کے ساتھ ’گیتانجلی‘ کا اردو ترجمہ بھی کیا

1927 -2010 پاکستان

کلاسکی طرز و اسلوب کے ممتاز شاعر،اپنے تذکرہ "سخن شعرا" کے لیے معروف

اپنے نعتیہ اور حمدیہ کلام کے لئے مشہور

جگر مرادآبادی کے شاگرد، کلاسیکی رنگ کی شاعری کی

اصلاحی اور مذہبی رنگ کی شاعری کے لیے معروف، مولانا اشرف علی تھانوی کے مرید

بیسوی صدی کی اہم علمی شخصیت، مصنف، مترجم، ناول نگار، ڈرامہ نویس۔ لکھنؤ کی سماجی و تہذیبی زندگی کے رمز شناس

1860 -1926 لکھنؤ

مقبول عام شاعر، زندگی اور محبت پر مبنی رومانی شاعری کے لیے معروف

1910 -1981 پاکستان

اپنے گیتوں اور گہرے سماجی شعور کی حامل نظموں کے لئے معروف، پنجابی شاعری کے تراجم بھی کیے

۸۰ کی دہائی میں ابھرنے والے بہار کے شاعروں میں شامل

1949

ممتاز شاعراور صحافی، اپنے وقت کے مقبول ترین اخبار’ زمیندار ‘کے مدیر رہے۔ ’ذکر اقبال‘ اور ’مسلم صحافت ہندوستان میں‘ جیسی کتابیں یادگار چھوڑیں

1894 -1959 لاہور

بہار کی مشہور ادبی شخصیت، شاعری کے ساتھ مختلف ادبی موضوعات پر اپنی منظوم تصانیف کے لیے جانے جاتے ہیں

۶۰ کی دہائی میں ابھرنے والے اہم شاعروں میں شامل، گہرے ادراک اور شدید جذباتی رویے کی حامل شاعری کے لیے معروف

Added to your favorites

Removed from your favorites