بیان درد محبت جو بار بار نہ ہو

جمیل الدین عالی

بیان درد محبت جو بار بار نہ ہو

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    بیان درد محبت جو بار بار نہ ہو

    کوئی نقاب ترے رخ کی پردہ دار نہ ہو

    سلام شوق کی جرأت سے دل لرزتا ہے

    کہیں مزاج گرامی پہ یہ بھی بار نہ ہو

    کرم پہ آئیں تو ہر ہر ادا میں عشق ہی عشق

    نہ ہو تو ان کا تغافل بھی آشکار نہ ہو

    یہی خیال رہا پتھروں کی بارش میں

    کہیں انہیں میں کوئی سنگ کوئے یار نہ ہو

    ابھی ہے آس کہ آخر کبھی تو آئے گا

    وہ ایک لمحہ کہ جب تیرا انتظار نہ ہو

    بہت فریب سمجھتا ہوں پھر بھی اے عالیؔ

    میں کیا کروں اگر ان پر بھی اعتبار نہ ہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY