بے سبب تجھ سے ہر اک بات پہ نالاں ہونا

جمیل الدین عالی

بے سبب تجھ سے ہر اک بات پہ نالاں ہونا

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    بے سبب تجھ سے ہر اک بات پہ نالاں ہونا

    اپنا پیشہ ہی جو ٹھہرا ہے پریشاں ہونا

    اتنی رسوائیاں سہہ لی ہیں تو اک یہ بھی سہی

    ہم کو منظور ہے منت کش درباں ہونا

    تجھ میں کیا بات ہے جو مجھ میں نہیں ہے ظالم

    ہاں مگر تیرے لیے میرا پریشاں ہونا

    ہائے اس بزم کے آداب جہاں لازم ہو

    کبھی حیراں نظر آنا کبھی حیراں ہونا

    عمر بھر کے لیے کافی ہے وہی ایک جھلک

    تم کو لازم نہیں ہر شے سے نمایاں ہونا

    خامشی میری کہیں اور پشیماں نہ کرے

    تم اگر ہو بھی تو خلوت میں پشیماں ہونا

    لوگ دیکھیں تو نہ جانے اسے کیا سمجھیں گے

    آئنہ دیکھنا تیرا مرا حیراں ہونا

    جیسے ساحل سے چھڑا لیتی ہیں موجیں دامن

    کتنا سادہ ہے ترا مجھ سے گریزاں ہونا

    ہیں تیرے رخ پہ وہ تقدیس کے پرتو کہ تجھے

    زیب دیتا ہی نہیں دشمن ایماں ہونا

    کیا خبر ان کو کہ ہے کتنا عجیب اے عالیؔ

    اک گراں شے کا کسی کے لیے ارزاں ہونا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY