اس کی قدرت کی دید کرتا ہوں

شیخ ظہور الدین حاتم

اس کی قدرت کی دید کرتا ہوں

شیخ ظہور الدین حاتم

MORE BYشیخ ظہور الدین حاتم

    اس کی قدرت کی دید کرتا ہوں

    روز نو روز عید کرتا ہوں

    میرا احوال فقر مت پوچھو

    زہد مثل فرید کرتا ہوں

    روز بازار ملک ہستی میں

    جنس عصیاں خرید کرتا ہوں

    فتح کرنے کو قلب دل کا حصار

    تیغ ہمت کلید کرتا ہوں

    بسکہ میں تشنۂ شہادت ہوں

    دل کو ہر دم شہید کرتا ہوں

    نہ میں سنی نہ شیعہ نے کافر

    صوفی ہوں سب کا وید کرتا ہوں

    شیخ تو گو کہ پیر زادہ ہے

    رہ تجھے میں مرید کرتا ہوں

    اپنے احسان خلق سے حاتمؔ

    آدمی کو عبید کرتا ہوں

    مأخذ :
    • کتاب : Diwan Zadah (Pg. 242)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY