Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

عشق سے کیسے بعض آئیں ہم عشق تو اپنا دھرم ہوا

ظہور نظر

عشق سے کیسے بعض آئیں ہم عشق تو اپنا دھرم ہوا

ظہور نظر

MORE BYظہور نظر

    عشق سے کیسے بعض آئیں ہم عشق تو اپنا دھرم ہوا

    جس دن عشق سے ناطہ ٹوٹا سمجھو کریہ کرم ہوا

    پھر یادیں گھر گھر کر آئیں پھر سلگے بن زخموں کے

    پھر بوندوں نے آگ لگائی پھر ساون سرگرم ہوا

    روپ تو اس کو ایسا دیتے دنیا دیکھتی لیکن ہم

    بت سازی ہی چھوڑ چکے تھے جب وہ پتھر نرم ہوا

    کیسے تیشہ و تیغ بناتے کیسے ضرب لگاتے لوگ

    ہتھکڑیاں تھیں سب کے ہاتھوں میں جب لوہا گرم ہوا

    ہم شب‌ زندہ داروں کی بینائی بھی تھی شرمندہ

    دیکھ کے اپنا چہرہ سورج آپ بہت بے شرم ہوا

    مأخذ :
    • کتاب : غزل اس نے چھیڑی-6 (Pg. 247)
    • Author : فرحت احساس
    • مطبع : ریختہ بکس ،بی۔37،سیکٹر۔1،نوئیڈا،اترپردیش۔201301 (2019)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے