میں سر چھپاؤں کہاں سایۂ نظر کے بغیر

سلیم احمد

میں سر چھپاؤں کہاں سایۂ نظر کے بغیر

سلیم احمد

MORE BYسلیم احمد

    میں سر چھپاؤں کہاں سایۂ نظر کے بغیر

    کہ تیرے شہر میں رہتا ہوں اور گھر کے بغیر

    مجھے وہ شدت احساس دے کہ دیکھ سکوں

    تجھے قریب سے اور منت نظر کے بغیر

    یہ شہر ذہن سے خالی نمو سے عاری ہے

    بلائیں پھرتی ہیں یاں دست و پا و سر کے بغیر

    نکل گئے ہیں جو بادل برسنے والے تھے

    یہ شہر آب کو ترسے گا چشم تر کے بغیر

    کوئی نہیں جو پتا دے دلوں کی حالت کا

    کہ سارے شہر کے اخبار ہیں خبر کے بغیر

    میں پاؤں توڑ کے بیٹھا رہا کہیں نہ گیا

    سلیمؔ منزلیں طے ہو گئیں سفر کے بغیر

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    سلیم احمد

    سلیم احمد

    سلیم احمد

    سلیم احمد

    RECITATIONS

    سلیم احمد

    سلیم احمد

    سلیم احمد

    میں سر چھپاؤں کہاں سایۂ نظر کے بغیر سلیم احمد

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY