نہیں کہ ہم نے کبھی حال سوز جاں نہ کہا

جمیل الدین عالی

نہیں کہ ہم نے کبھی حال سوز جاں نہ کہا

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    نہیں کہ ہم نے کبھی حال سوز جاں نہ کہا

    مگر بہ حیلۂ آرائش بیاں نہ کہا

    کوئی خطا نہ ہوئی جس کی یہ ملے پاداش

    مگر یہی کہ زمینوں کو آسماں نہ کہا

    جس انجمن سے ہوا قصۂ جنوں آغاز

    وہیں کبھی نہ کہا گو کہاں کہاں نہ کہا

    یہ احترام تعلق یہ احتیاط تو دیکھ

    کہ زندگی کو کبھی ہم نے رائیگاں نہ کہا

    ترے کرم کو کرم ہی کہا ستم کو ستم

    زہے خلوص تمنا کہ امتحاں نہ کہا

    ہزار خشک رہا اپنی زندگی کا چمن

    تری بہار کو لیکن کبھی خزاں نہ کہا

    ہمیں بھی ندرت اسلوب تھی عزیز مگر

    انہیں جہاں ہی پکارا غم جہاں نہ کہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY