روز خوں ہوتے ہیں دو چار ترے کوچے میں

مصطفیٰ خاں شیفتہ

روز خوں ہوتے ہیں دو چار ترے کوچے میں

مصطفیٰ خاں شیفتہ

MORE BYمصطفیٰ خاں شیفتہ

    روز خوں ہوتے ہیں دو چار ترے کوچے میں

    ایک ہنگامہ ہے اے یار ترے کوچے میں

    every day, some in your street are slain

    my love, a furor now infests your lane

    فرش رہ ہیں جو دل افگار ترے کوچے میں

    خاک ہو رونق گلزار ترے کوچے میں

    with bloodied hearts your street is littered now

    your street can never have the garden's glow

    سرفروش آتے ہیں اے یار ترے کوچے میں

    گرم ہے موت کا بازار ترے کوچے میں

    as ardent martyrs, in your street arrive

    death's marketplace begins to hum and thrive

    شعر بس اب نہ کہوں گا کہ کوئی پڑھتا تھا

    اپنے حالی مرے اشعار ترے کوچے میں

    I'll speak no more, as someone does repeat

    as if his own, my verses, in your street

    نہ ملا ہم کو کبھی تیری گلی میں آرام

    نہ ہوا ہم پہ جز آزار ترے کوچے میں

    no comfort in your street I ever found

    save torture nothing else was all around

    ملک الموت کے گھر کا تھا ارادہ اپنا

    لے گیا شوق غلط کار ترے کوچے میں

    To go to death's abode resolved, in vain,

    but wayward wishes led me to your lane

    تو ہے اور غیر کے گھر جلوہ طرازی کی ہوس

    ہم ہیں اور حسرت دیدار ترے کوچے میں

    at my rival's home you preen and prance

    whilst in your lane I yearn for just a glance

    ہم بھی وارستہ مزاجی کے ہیں اپنی قائل

    خلد میں روح تن زار ترے کوچے میں

    my love of freedom will ever remain

    my soul in heaven, body in your lane

    کیا تجاہل سے یہ کہتا ہے کہاں رہتے ہو

    ترے کوچے میں ستم گار ترے کوچے میں

    of my address such ignorance you feign

    tis in your lane, O tyrant, in your lane

    شیفتہؔ ایک نہ آیا تو نہ آیا کیا ہے

    روز آ رہتے ہیں دو چار ترے کوچے میں

    what matters if just Sheftaa stays away?

    as several come, dwell in your lane each day

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    روز خوں ہوتے ہیں دو چار ترے کوچے میں فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY