تمنا دل میں گھر کرتی بہت ہے

سہیل احمد زیدی

تمنا دل میں گھر کرتی بہت ہے

سہیل احمد زیدی

MORE BY سہیل احمد زیدی

    تمنا دل میں گھر کرتی بہت ہے

    ہوا اس دشت میں چلتی بہت ہے

    جمانا رنگ اس دنیا سے سیکھے

    کہ ہے تو کچھ نہیں بنتی بہت ہے

    اسے اک پل کبھی رہنے نہ دینا

    پھپھوندی قلب پر جمتی بہت ہے

    کہ ساری عمر انگارے چنے ہیں

    ہتھیلی ہاتھ کی جلتی بہت ہے

    سہیلؔ احمد سمجھ کر صرف کرنا

    ذرا سی زندگی لگتی بہت ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY