یہ کار بے ثمراں مجھ سے ہونے والا نہیں

شہباز خواجہ

یہ کار بے ثمراں مجھ سے ہونے والا نہیں

شہباز خواجہ

MORE BYشہباز خواجہ

    یہ کار بے ثمراں مجھ سے ہونے والا نہیں

    میں زندگی کو بہت دیر ڈھونے والا نہیں

    میں سطح آب پہ اک تیرتا ہوا لاشہ

    مجھے کوئی بھی سمندر ڈبونے والا نہیں

    بڑے جتن سے ملا ہے یہ اپنا آپ مجھے

    میں اب کسی کے لیے خود کو کھونے والا نہیں

    فصیل شہر ترا آخری محافظ ہوں

    یہ شہر جاگے نہ جاگے میں سونے والا نہیں

    وہ ایک تو کہ ترے غم میں اک جہاں روئے

    وہ ایک میں کہ مرا کوئی رونے والا نہیں

    کسی کو پھول نہ دے پاؤں میں اگر شہبازؔ

    کسی کی روح میں کانٹے چبھونے والا نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY