یہ زرد پھول یہ کاغذ پہ حرف گیلے سے

شہباز خواجہ

یہ زرد پھول یہ کاغذ پہ حرف گیلے سے

شہباز خواجہ

MORE BYشہباز خواجہ

    یہ زرد پھول یہ کاغذ پہ حرف گیلے سے

    تمہاری یاد بھی آئی ہزار حیلے سے

    بدن کا لمس ہوا کو بنا گیا خوشبو

    نظر کے سحر سے منظر ہوئے نشیلے سے

    یہ زندگی بھی فقط ریت کا سمندر ہے

    کبھی نگاہ جو ڈالو فنا کے ٹیلے سے

    یہ شاعری مجھے شہبازؔ یوں بھی پیاری ہے

    کہ میرا خود سے تعلق ہے اس وسیلے سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY