وہ شخص کبھی جس نے مرا گھر نہیں دیکھا

دلاور فگار

وہ شخص کبھی جس نے مرا گھر نہیں دیکھا

دلاور فگار

MORE BYدلاور فگار

    وہ شخص کبھی جس نے مرا گھر نہیں دیکھا

    اس شخص کو میں نے کبھی گھر پر نہیں دیکھا

    کیا دیکھو گے حال دل برباد کہ تم نے

    کرفیو میں مرے شہر کا منظر نہیں دیکھا

    جاں دینے کو پہنچے تھے سبھی تیری گلی میں

    بھاگے تو کسی نے بھی پلٹ کر نہیں دیکھا

    داڑھی ترے چہرے پہ نہیں ہے تو عجب کیا

    یاروں نے ترے پیٹ کے اندر نہیں دیکھا

    تفریح یہ ہوتی ہے کہ ہم سیر کی خاطر

    ساحل پہ گئے اور سمندر نہیں دیکھا

    فٹ پاتھ پہ بھی اب نظر آتے ہیں کمشنر

    کیا تم نے کوئی اوتھ کمشنر نہیں دیکھا

    افسوس کہ اک شخص کو دل دینے سے پہلے

    مٹکے کی طرح ٹھونک بجا کر نہیں دیکھا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    وہ شخص کبھی جس نے مرا گھر نہیں دیکھا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY