aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

برگد کا بوڑھا پیڑ

پاشا رحمان

برگد کا بوڑھا پیڑ

پاشا رحمان

MORE BYپاشا رحمان

    برگد کا یہ بوڑھا پیڑ

    جس کے جسم کی کھال تک اب تو سوکھ گئی ہے

    اس کے سائے میں

    جانے کتنے رومان پلے ہیں

    جانے کتنے پیمان بندھے ہیں

    اس برگد کے پیڑ کو سب

    ہم راز بنا کر

    جیون ساتھ نبھانے کا

    وعدہ کرتے تھے

    اس برگد کے سائے میں

    کتنی چھیل چھبیلی سندر ناری

    میت سے ملنے کی آشا میں

    پہروں بیٹھی رہتی تھیں

    کتنے البیلے شوخ کنہیا

    اس برگد کے سائے میں

    اپنی نے سے

    مد بھری آواز کا جادو گھولتے تھے

    برہا راگ کو چھیڑ کے اکثر

    فرط غم سے

    اشک کے موتی رولتے تھے

    مأخذ:

    نشاط کرب (Pg. 47)

    • مصنف: پاشا رحمان
      • ناشر: اردو اکیڈمی سندھ، کراچی
      • سن اشاعت: 1978

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے