Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
noImage

عبدالمجید خاں مجید

1948 | بیتیا, انڈیا

۸۰ کی دہائی میں ابھرنے والے بہار کے شاعروں میں شامل

۸۰ کی دہائی میں ابھرنے والے بہار کے شاعروں میں شامل

عبدالمجید خاں مجید کے اشعار

413
Favorite

باعتبار

اب چراغوں میں زندگی کم ہے

دل جلاؤ کہ روشنی کم ہے

بے وفا کہئے با وفا کہئے

دل میں آئے جو برملا کہئے

نہیں ملتی انہیں منزل جنہیں خوف حوادث ہے

جو موجوں سے نہیں ڈرتے ندی کو پار کرتے ہیں

زندگی چھوٹی ہے سامان بہت

اور دل کے بھی ہیں ارمان بہت

جس کے پیروں تلے زمین نہیں

اس کا سارا جہان ہوتا ہے

سب اپنی اپنی راہ پر آگے نکل گئے

اب کس کا انتظار کئے جا رہے ہیں ہم

نہ جانے کس کی یاد نے لی دل میں گدگدی

آئنہ دیکھ دیکھ کے شرما رہے ہیں ہم

کہاں شکوہ زمانے کا پس دیوار کرتے ہیں

ہمیں کرنا ہے جو بھی ہم سر بازار کرتے ہیں

اپنے دامن کی کچھ خبر ہے مجیدؔ

سوچ کر خود کو پارسا کہئے

کیف و مستی سرور کیا معنی

زندگی میں بھی اب خوشی کم ہے

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے