noImage

آگاہ دہلوی

1839 - 1917 | دلی, انڈیا

آگاہ دہلوی کے اشعار

اس کی بیٹی نے اٹھا رکھی ہے دنیا سر پر

خیریت گزری کہ انگور کے بیٹا نہ ہوا

میں نے سوال وصل جو ان سے کیا کبھی

بولے نصیب میں ہے تو ہو جائے گا کبھی

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے