noImage

آگاہ دہلوی

1839 - 1917 | دلی, انڈیا

آگاہ دہلوی

اشعار 2

اس کی بیٹی نے اٹھا رکھی ہے دنیا سر پر

خیریت گزری کہ انگور کے بیٹا نہ ہوا

  • شیئر کیجیے

میں نے سوال وصل جو ان سے کیا کبھی

بولے نصیب میں ہے تو ہو جائے گا کبھی

  • شیئر کیجیے
 

"دلی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے