Akhlaq Ahmad Ahan's Photo'

اخلاق احمد آہن

1974 | دلی, ہندوستان

محقق اور شاعر ،اپنی طویل نظم "سوچنے پہ پہرا ہے "کے لیے مشہور/ پروفیسر جے این یو

محقق اور شاعر ،اپنی طویل نظم "سوچنے پہ پہرا ہے "کے لیے مشہور/ پروفیسر جے این یو

وہ جادو ادائیں اداؤں میں جادو

یہ پہنچایں ہم کو فنا سے بقا تک

ستاروں کی گردش دلوں کا بچھڑنا

یہ کیسے خدا کی ہے کیسی خدائی

یہ کیسی جگہ ہے کہ دل کھو رہا ہے

بیاباں ہے صحرا ہے گلشن ہے کیا ہے

راہ حیات میں نہ ملی ایک پل خوشی

غم کا یہ بوجھ دوش پہ سامان سا رہا

رسم دنیا کے سلاسل میں گرفتاری ہے

مت ٹھہرنا کہ کہیں پھانس جواں تر ہو جائے

ترے فراق میں ہم نے بہائے اشک جگر

یہ سب نے چاہا مگر آئے تو لہو آئے

غم وجود کا ماتم کروں تو کیسے جیوں

مگر خدا ترے دامن پہ داغ ہے کہ نہیں