aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
Allama Iqbal's Photo'

علامہ اقبال

1877 - 1938 | لاہور, پاکستان

عظیم اردو شاعر اور 'سارے جہاں سے اچھا...' اور 'لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری' جیسے شہرہ آفاق ترانے کے خالق

عظیم اردو شاعر اور 'سارے جہاں سے اچھا...' اور 'لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری' جیسے شہرہ آفاق ترانے کے خالق

علامہ اقبال کے اقوال

231
Favorite

باعتبار

انصاف ایک بیکراں خزانہ ہے۔ لیکن ہمیں اسے رحم کے چور سے محفوظ رکھنا چاہیے۔

انسانوں سے ملنے والے صدمات کے علاوہ انسان کی یادداشت عام طور پر خراب ہوتی ہے۔

تہذیب ایک طاقتور انسان کی فکر ہے۔

یقین ایک بڑی طاقت ہے۔ جب میں دیکھتا ہوں کہ دوسرا بھی میرے افکار کا موید ہے، تو اس کی صداقت کے بارے میں میرا اعتماد بے انتہا بڑھ جاتا ہے۔

افراد اور قومیں ختم ہو جاتی ہیں۔ مگر ان کے بچے یعنی تصورات کبھی ختم نہیں ہوتے۔

ہماری روح کو اُس وقت اپناعرفان حاصل ہوتا ہے، جب ہم کسی مفکر سے روشناس ہوتے ہیں۔ جب تک میں گوئٹے کے تصورات کی لامتناہیت سے بے خبر تھا۔ اس وقت تک میں اپنی کم مائیگی پر مطلع نہ تھا۔

ایک مقدس جھوٹ ہے۔

شاعری میں منطقی سچائی کی تلاش بالکل بے کار، ہے تخیل کا نصب العین حسن ہے، نہ کہ سچائی۔ اس لئے کسی فنکار کی عظمت کو ظاہر کرنے کے لئے اس کی تخلیقات میں سے وہ اقتباسات پیش نہ کیجئے۔ جو آپ کی رائے میں سائنسی حقائق پرمشتمل ہوں۔

تاریخ ایک طرح کی عملی اخلاقیات ہے۔ دوسرے علوم کی طرح اگر اخلاقیات ایک تجرباتی علم ہے۔ تو اُسے انسانی تجربات کے انکشافات پر مبنی ہونا چاہئے۔ اس نقطۂ نظر کے برملا اظہار سے ان لوگوں کے بھی نازک احساسات کو یقیناً صدمہ پہنچے گا۔ جو اخلاق کے معاملے میں سخت گیر ہونے کے دعویدار ہیں۔ لیکن جن کا عوامی کردار تاریخی تعلیمات سے متعین ہوتا ہے۔

میتھیو آرنلڈ شاعری کو تنقید حیات بتاتا ہے۔ زندگی کو تنقید شاعری کہنا بھی اتنا ہی درست ہے۔

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے