Bashar Nawaz's Photo'

بشر نواز

1935 - 2015 | اورنگ آباد, ہندوستان

ممتاز ترقی پسند شاعر،نقاد،اسکرپٹ رائٹراورنغمہ نگار۔فلم بازار کے گیت' کروگے یاد تو ہر بات یاد آئیگی 'کے لئے مشہور

ممتاز ترقی پسند شاعر،نقاد،اسکرپٹ رائٹراورنغمہ نگار۔فلم بازار کے گیت' کروگے یاد تو ہر بات یاد آئیگی 'کے لئے مشہور

تخلص : 'Bashar Nawaz'

اصلی نام : بشارت نواز خاں

پیدائش : 21 Oct 1935 | اورنگ آباد, مہاراشٹر

وفات : 09 Jul 2015 | اورنگ آباد, بہار

کرو گے یاد تو ہر بات یاد آئے گی

گزرتے وقت کی ہر موج ٹھہر جائے گی

امین نواز خاں کے بیٹے،معروف نقاد،ادیب ،ہجو گو،ممتازشاعراور نغمہ نگاربشارت نواز خاں دنیائے ادب میں بشر نواز کے نام سے جانے گئے۔ 18 اگست 1935 کواورنگ آباد، مہاراشٹر میں پیدا ہوئے۔والدعلی گڑھ کے فارغ التحصیل اوراورنگ آباد میں ناظم تعلیمات تھے ۔والدہ ممتازفاطمہ عالمہ تھیں جودرس قرآن دیا کرتی تھیں۔انٹرمیڈیٹ تک تعلیم حاصل کرنے کے بعد گریجویشن کے لئے حیدرآباد کاسفرکیا لیکن اعلی تعلیم مکمل نہ ہوسکی۔ ان کی شاعری کا آغاز 1953میں ہوا۔ وہ 1954سے ہی بڑے بڑے مشاعروں میں مدعو کیے جانے لگے۔ حی آباد کے مشاعرے میں پہلی باران کوممتازترقی پسند شاعر مخدوم محی الدین نے متعارف کروایا ۔شعری مجموعے رائیگاں اوراجنبی سمندرکےعلاوہ ایک تنقیدی مجموعہ نیا ادب نئے مسائل ان کے ادبی آثار ہیں ۔ وہ ترقی پسند تحریک کے ممتاز شعرا میں شمار کیے جاتے ہیں۔نواز اپنی نظموں کے آہنگ سے بھی پہچانے گئے ۔ایک عرصے تک فلموں سے وابستہ رہے۔ فلم بازارکا نغمہ کروگے یاد توہربات یاد آئیگی انہی کا لکھاہواہے۔ان کے لکھے ہوئے نغمے محمد رفیع ،لتا منگیشکر،آشا بھونسلے سمیت کئی اہم فن کاروں کی آواز میں سامعین تک پہنچتے رہے ہیں۔ریڈیو کے لیے کئی ڈرامے لکھے اور ٹی وی سیریل امیر خسرو کا اسکرپٹ بھی انہی کا لکھا ہوا ہے۔دیو ناگری میں بھی ان کا کلام موجود ہے ۔9جولائی 2015کو دار فانی سے رخصت ہوگئے 

موضوعات