Bashir Farooqi's Photo'

بشیر فاروقی

1939 - 2019 | لکھنؤ, ہندوستان

آگہی کرب وفا صبر تمنا احساس

میرے ہی سینے میں اترے ہیں یہ خنجر سارے

ہم تیرے پاس آ کے پریشان ہیں بہت

ہم تجھ سے دور رہنے کو تیار بھی نہیں

چلے بھی آؤ کہ یہ ڈوبتا ہوا سورج

چراغ جلنے سے پہلے مجھے بجھا دے گا

عجب سی آگ تھی جلتا رہا بدن سارا

تمام عمر وہ ہونٹوں پہ بن کے پیاس رہا

پہلے ہم نے گھر بنا کر فاصلے پیدا کیے

پھر اٹھا دیں اور دیواریں گھروں کے درمیاں

تذکرے میں ترے اک نام کو یوں جوڑ دیا

دوستوں نے مجھے شیشے کی طرح توڑ دیا