noImage

فہیم گورکھپوری

1878 | گورکھپور, ہندوستان

فہیم گورکھپوری

غزل 16

اشعار 5

رہ گئی ہے کچھ کمی تو کیا شکایت ہے فہیمؔ

اس جہاں میں سب ادھورے ہیں مکمل کون ہے

  • شیئر کیجیے

کردار دیکھنا ہے تو صورت نہ دیکھیے

ملتا نہیں زمیں کا پتا آسمان سے

  • شیئر کیجیے

کہہ کے یہ پھیر لیا منہ مرے افسانے سے

فائدہ روز کہیں بات کے دہرانے سے

  • شیئر کیجیے

سب کی دنیا تباہ کرتے ہو

تم بھی کیا ہو گئے ہو امریکہ

  • شیئر کیجیے

کل جو گلے ملتے تھے مجھ سے کل جو مجھے پہچانتے تھے

آج مسافر جان کے کیسے رستے وہ انجان ہوئے

  • شیئر کیجیے

کتاب 1

یادگار فہیم

 

1983

 

"گورکھپور" کے مزید شعرا

  • مسلم انصاری مسلم انصاری
  • شمیم فاروق بانس پاری شمیم فاروق بانس پاری
  • اختر بستوی اختر بستوی
  • ہندی گورکھپوری ہندی گورکھپوری
  • شمیم شہزاد شمیم شہزاد
  • ریاض گورکھپوری ریاض گورکھپوری