Fareed Parbati's Photo'

فرید پربتی

1961 - 2011 | سری نگر, انڈیا

فرید پربتی

غزل 15

اشعار 5

کسی پہ کرنا نہیں اعتبار میری طرح

لٹا کے بیٹھوگے صبر و قرار میری طرح

کبھی میری طلب کچے گھڑے پر پار اترتی ہے

کبھی محفوظ کشتی میں سفر کرنے سے ڈرتا ہوں

تمہیں بھی بھولنے کی کوششیں کیں

کہ خود پر بھی قیامت کر گیا وہ

فریدؔ اک دن سہارے زندگی کے ٹوٹ جائیں گے

سبب یہ ہے کہ خود کو بے سہارا کر رہا ہوں میں

بگولہ بن کے اڑا خواہشوں کے صحرا میں

ٹھہر گیا تو فقط تھا غبار میری طرح

رباعی 12

کتاب 19

"سری نگر" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI