Fareed Parbati's Photo'

فرید پربتی

1961 - 2011 | سری نگر, ہندوستان

غزل 10

اشعار 5

کسی پہ کرنا نہیں اعتبار میری طرح

لٹا کے بیٹھوگے صبر و قرار میری طرح

کبھی میری طلب کچے گھڑے پر پار اترتی ہے

کبھی محفوظ کشتی میں سفر کرنے سے ڈرتا ہوں

تمہیں بھی بھولنے کی کوششیں کیں

کہ خود پر بھی قیامت کر گیا وہ

فریدؔ اک دن سہارے زندگی کے ٹوٹ جائیں گے

سبب یہ ہے کہ خود کو بے سہارا کر رہا ہوں میں

بگولہ بن کے اڑا خواہشوں کے صحرا میں

ٹھہر گیا تو فقط تھا غبار میری طرح

رباعی 12

کتاب 14

آب نیساں

 

1991

ابر تر

 

1988

عکس عکس آئینہ

مشاہیرادب کے خطوط بنام فرید پربتی

2013

داغ بحیثیت مثنوی نگار

 

2010

داغ بحیثیت مثنوی نگار

 

2010

فرید نامہ

 

2003

گفتگو

 

2005

ہزار امکان

 

2011

ہمجوم آئینہ

 

2010

انتقاد و اصلاح

 

2005

"سری نگر" کے مزید شعرا

  • شفق سوپوری شفق سوپوری
  • ایاز رسول نازکی ایاز رسول نازکی
  • حامدی کاشمیری حامدی کاشمیری
  • فاروق نازکی فاروق نازکی
  • رفیق راز رفیق راز
  • ہمدم کاشمیری ہمدم کاشمیری
  • عرفان احمد میر عرفان احمد میر
  • مظفر ایرج مظفر ایرج
  • زہیب حسین زہیب حسین