Hamid Mukhtar Hamid's Photo'

حامد مختار حامد

مظفر نگر, انڈیا

حامد مختار حامد

غزل 7

اشعار 8

یہ جفاؤں کی سزا ہے کہ تماشائی ہے تو

یہ وفاؤں کی سزا ہے کہ پئے دار ہوں میں

گر نہ جائے ترے معیار سے انداز حروف

یوں کبھی نام بھی تیرا نہیں لکھا میں نے

آج کا خط ہی اسے بھیجا ہے کورا لیکن

آج کا خط ہی ادھورا نہیں لکھا میں نے

عمر ہی تیری گزر جائے گی ان کے حل میں

تیرا بچہ جو سوالات لیے بیٹھا ہے

تو ہنسی لے کے مری آنکھ کو آنسو دے دے

مجھ سے سوکھا ہوا دریا نہیں دیکھا جاتا

"مظفر نگر" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے