غزل 10

اشعار 4

مجھے پتہ ہے محبت میں کیا گزرتی ہے

سو تجھ سے عشق نہیں تجھ سے دوستی کروں گا

  • شیئر کیجیے

اس نے اس طرح سے بدلہ ہے رویہ اپنا

پوچھنا پڑتا ہے ہر وقت تمہیں ہو نا دوست

  • شیئر کیجیے

اندھیرے اس لیے رہتے ہیں ساتھ ساتھ مرے

یہ جانتے ہیں میں اک روز روشنی کروں گا

  • شیئر کیجیے

لوگ جیسے بھی ہوں پیروں کے تلے رکھتے ہیں

اتنا آساں نہیں ہوتا ہے زمین ہونا دوست

  • شیئر کیجیے

تصویری شاعری 1

جیسا سوچو ویسا مطلب ہوتا ہے ہلکی بات کا گہرا مطلب ہوتا ہے چہرہ پڑھ کر دیکھو_گے تو جانو_گے خاموشی کا کیا کیا مطلب ہوتا ہے ہجرت کو تم نقل_مکانی کہتے ہو ہجرت کا مر جانا مطلب ہوتا ہے اپنی بات مکمل کر کے جاؤ تم آدھی بات کا الٹا مطلب ہوتا ہے شہزادی ہے دنیا مطلب والی یہ سب کا اپنا اپنا مطلب ہوتا ہے

 

متعلقہ شعرا

  • پلو مشرا پلو مشرا ہم عصر
  • عاقب صابر عاقب صابر ہم عصر
  • عبدالرحمان مومن عبدالرحمان مومن ہم عصر
  • انیس ابر انیس ابر ہم عصر

"حیدر آباد" کے مزید شعرا

  • جلیل مانک پوری جلیل مانک پوری
  • امیر مینائی امیر مینائی
  • رؤف رحیم رؤف رحیم
  • ولی عزلت ولی عزلت
  • مصحف اقبال توصیفی مصحف اقبال توصیفی
  • شفیق فاطمہ شعریٰ شفیق فاطمہ شعریٰ
  • خورشید احمد جامی خورشید احمد جامی
  • راشد آذر راشد آذر
  • شاہد صدیقی شاہد صدیقی
  • ریاست علی تاج ریاست علی تاج