مرغوب علی

غزل 14

اشعار 11

بھیگی مٹی کی مہک پیاس بڑھا دیتی ہے

درد برسات کی بوندوں میں بسا کرتا ہے

  • شیئر کیجیے

مجھ کو برباد خود ہی ہونا تھا

تم پہ الزام بے سبب آئے

  • شیئر کیجیے

حقیقی چہرہ کہیں پر ہمیں نہیں ملتا

سبھی نے چہرہ پہ ڈالے ہیں مصلحت کے نقاب

  • شیئر کیجیے

بچھڑ کے تجھ سے عجب حال ہو گیا میرا

تمام شہر پرایا دکھائی دیتا ہے

  • شیئر کیجیے

سب ممکن تھا پیار محبت ہنستے چہرے خواب نگر

لیکن ایک انا نے کتنے بھولے دن برباد کئے

  • شیئر کیجیے

کتاب 4

 

"نجیب آباد" کے مزید شعرا

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI