Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
Meer Khaleeq's Photo'

میر خلیق

1766 - 1844 | لکھنؤ, انڈیا

میر خلیق کے اشعار

مثل آئینہ ہے اس رشک قمر کا پہلو

صاف ادھر سے نظر آتا ہے ادھر کا پہلو

سر جھکا لیتا ہے لالہ شرم سے

جب جگر کے داغ دکھلاتے ہیں ہم

غفلت میں فرق اپنی تجھ بن کبھو نہ آیا

ہم آپ کے نہ آئے جب تک کہ تو نہ آیا

نزع میں گر مری بالیں پہ تو آیا ہوتا

اس طرح اشک میں آنکھوں میں نہ لایا ہوتا

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے