Mohsin Kakorvi's Photo'

محسن کاکوروی

1837 - 1905

محسن کاکوروی

اشعار 4

دامن سے وہ پونچھتا ہے آنسو

رونے کا کچھ آج ہی مزا ہے

  • شیئر کیجیے

دیکھیے ہوگا شری کرشن کا درشن کیوں کر

سینۂ تنگ میں دل گوپیوں کا ہے بے کل

  • شیئر کیجیے

راکھیاں لے کے سلونوں کی برہمن نکلیں

تار بارش کا تو ٹوٹے کوئی ساعت کوئی پل

  • شیئر کیجیے

سنا ہے محتسب بھی تاک میں ہے دختر رز کی

الٰہی رکھ لے تو حرمت شراب ارغوانی کی

  • شیئر کیجیے

قصیدہ 1

 

کتاب 18

اے نیو ایپروچ ٹو اقبال

 

1987

اودھ میں اردوادب کا تہذیبی اورفکری پس منظر

 

1996

چار چاند

 

1901

دیوان نیرنگ

 

1929

فغان محسن

 

1872

گلدستہ محسن

 

1885

گلدستہ محسن

 

1931

انتخاب قصائد

 

1975

کلیات مولوی محمد حسن

 

1908

کلیات نعت مولوی محمد محسن

 

1905