Naseem Shahjahanpuri's Photo'

نسیم شاہجہانپوری

1937 | شاہ جہاں پور, ہندوستان

تنہائی کے لمحات کا احساس ہوا ہے

جب تاروں بھری رات کا احساس ہوا ہے

وہ ظلم بھی اب ظلم کی حد تک نہیں کرتے

آخر انہیں کس بات کا احساس ہوا ہے

سر محشر اگر پرسش ہوئی مجھ سے تو کہہ دوں گا

سراپا جرم ہوں اشک ندامت لے کے آیا ہوں

میں نے مانا آپ نے سب کچھ بھلا ڈالا مگر

غیرممکن ہے کبھی میرا خیال آتا نہ ہو

کچھ خود بھی ہوں میں عشق میں افسردہ و غمگیں

کچھ تلخئ حالات کا احساس ہوا ہے