Shahid Kamal's Photo'

شاہد کمال

1982 | لکھنؤ, ہندوستان

غزل 38

اشعار 4

جنگ کا شور بھی کچھ دیر تو تھم سکتا ہے

پھر سے اک امن کی افواہ اڑا دی جائے

  • شیئر کیجیے

تیر مت دیکھ مرے زخم کو دیکھ

یار یار اپنا عدو میں گم ہے

ریت پر وہ پڑی ہے مشک کوئی

تیر بھی اور کمان سا کچھ ہے

ای- کتاب 1

رسم تکلم

 

1991

 

شعرا کے مزید "لکھنؤ"

  • حکیم آغا جان عیش حکیم آغا جان عیش
  • آر پی شوخ آر پی شوخ
  • مینا نقوی مینا نقوی
  • جیوتی آزاد کھتری جیوتی آزاد کھتری
  • ہیرا لال فلک دہلوی ہیرا لال فلک دہلوی
  • معروف دہلوی معروف دہلوی
  • مشتاق نقوی مشتاق نقوی
  • ماہر عبدالحی ماہر عبدالحی
  • اجیت سنگھ حسرت اجیت سنگھ حسرت
  • رخشاں ہاشمی رخشاں ہاشمی