noImage

امداد علی بحر

1810 - 1878 | لکھنؤ, ہندوستان

غزل 86

اشعار 80

آنکھیں نہ جینے دیں گی تری بے وفا مجھے

کیوں کھڑکیوں سے جھانک رہی ہے قضا مجھے

  • شیئر کیجیے

بناوٹ وضع داری میں ہو یا بے ساختہ پن میں

ہمیں انداز وہ بھاتا ہے جس میں کچھ ادا نکلے

  • شیئر کیجیے

کوثر کا جام اس کو الٰہی نصیب ہو

کوئی شراب میری لحد پر چھڑک گیا

  • شیئر کیجیے

ای- کتاب 1

ریاض البحر

 

1837

 

شعرا متعلقہ

  • خواجہ محمد وزیر خواجہ محمد وزیر ہم عصر
  • مرزا غالب مرزا غالب ہم عصر
  • وزیر علی صبا لکھنؤی وزیر علی صبا لکھنؤی ہم عصر
  • امام بخش ناسخ امام بخش ناسخ استاد
  • حاتم علی مہر حاتم علی مہر ہم عصر

شعرا کے مزید "لکھنؤ"

  • نسیم دہلوی نسیم دہلوی
  • حکیم آغا جان عیش حکیم آغا جان عیش
  • آر پی شوخ آر پی شوخ
  • ہیرا لال فلک دہلوی ہیرا لال فلک دہلوی
  • مشتاق نقوی مشتاق نقوی
  • ماہر عبدالحی ماہر عبدالحی
  • سوربھ شیکھر سوربھ شیکھر
  • اجیت سنگھ حسرت اجیت سنگھ حسرت
  • شہناز نبی شہناز نبی
  • رخشاں ہاشمی رخشاں ہاشمی