noImage

طالب جے پوری

1911

بے خودی میں ہم تو تیرا در سمجھ کر جھک گئے

اب خدا معلوم کعبہ تھا کہ وہ بت خانہ تھا

نہ آنکھوں میں آنسو نہ لب پر تبسم

محبت میں ایسے بھی لمحات آئے

ان کی طرف بھی دیکھو ذرا اے گدا نواز

دامن ہی تیرے سامنے پھیلا کے رہ گئے