Zaheer Ghazipuri's Photo'

ظہیرؔ غازی پوری

1938 | ہزاری باغ, ہندوستان

غزل 6

اشعار 5

بم پھٹے لوگ مرے خون بہا شہر لٹے

اور کیا لکھا ہے اخبار میں آگے پڑھیے

  • شیئر کیجیے

کاغذ کی ناؤ بھی ہے کھلونے بھی ہیں بہت

بچپن سے پھر بھی ہاتھ ملانا محال ہے

تا عمر اپنی فکر و ریاضت کے باوجود

خود کو کسی سزا سے بچانا محال ہے

کتاب 10

آشوب نوا

 

1978

آشوب نوا

 

1978

الفاظ کا سفر

 

1976

جھارکھنڈ اور بہار کے اہم اہل قلم

حصہ.001

2009

کہرے کی دھول

 

1986

لفظوں کے پرند

 

1998

سبز موسم کی صدا

 

1990

تثلیث فن

 

1972

تلیث فن

 

1972

اردو دوہے-ایک تنقیدی جائزہ

 

2005

 

"ہزاری باغ" کے مزید شعرا

  • زین رامش زین رامش