Afzal Ahmad Syed's Photo'

افضال احمد سید

1946 | کراچی, پاکستان

پاکستان کے ممتاز ترین شاعروں میں سے ایک، اپنی تہہ دار شاعری کے لیے معروف

پاکستان کے ممتاز ترین شاعروں میں سے ایک، اپنی تہہ دار شاعری کے لیے معروف

42
Favorite

باعتبار

یہی بہت تھے مجھے نان و آب و شمع و گل

سفر نژاد تھا اسباب مختصر رکھا

اسے عجب تھا غرور شگفت رخساری

بہار گل کو بہت بے ہنر کہا اس نے

کتاب عمر سے سب حرف اڑ گئے میرے

کہ مجھ اسیر کو ہونا ہے ہم کلام اس کا

میں چاہتا ہوں مجھے مشعلوں کے ساتھ جلا

کشادہ تر ہے اگر خیمۂ ہوا تجھ پہ

اس دل کو کسی دست ادا سنج میں رکھنا

ممکن ہے یہ میزان کم و بیش جلا دے

کمان شاخ سے گل کس ہدف کو جاتے ہیں

نشیب خاک میں جا کر مجھے خیال آیا

میں دل کو اس کی تغافل سرا سے لے آیا

اور اپنے خانۂ وحشت میں زیر دام رکھا

کتاب خاک پڑھی زلزلے کی رات اس نے

شگفت گل کے زمانے میں وہ یقیں لایا

عطا اسی کی ہے یہ شہد و شور کی توفیق

وہی گلیم میں یہ نان بے جویں لایا

کمان خانۂ افلاک کے مقابل بھی

میں اس سے اور وہ پھر کج کلاہ مجھ سے ہوا